قرآن ہمارا دستورِ حیات ہے

ٰانڈین مسلم ایسوسی ایشن حلقہ فحاحیل نے 8دسمبر2011ءبعد نماز عشائ” قرآن فہمی سب کے لیے“ کے موضوع پر ایک عمومی اجتماع منعقد کیا جس میںتقریباًچارسو افراد نے شرکت کی، پروگرام کاآغازحافظ محمد شریف کی تلاوت قرآن سے ہوا ۔ مولانا مسعود شہاب نائب صدر IMA نے اپنے افتتاحی کلمات میںپروگرام منعقد کرنے والوں اور شرکاءکو داد تحسین پیش کرتے ہوئے پرگرام کی غرض وغایت بیان کی ۔پروگرام کے مہمان خصوصی IPCشاخ فحاحیل کے مدیرمحترم منیف العجمی نے IMA کے احباب کا شکریہ ادا کیا کرتے ہوئے کہا کہ آج کے دور میں اتنے اہم موضوع پر عمومی پروگرام منعقد کرنا جوئے شیر لانے سے کم نہیں ، ساتھ ہی انہوں نے کہاکہ آپ لوگوں نے مجھے مدعوکیا میں اس طرح کی مجلسوں میں آکر اپنے آپ کو خوش نصیب سمجھتاہوں ، انہوں نے مزید کہا کہ دین علمائے کرام کی جدوجہد سے پھیلاہے ، قرآن ہمارا دستور حیات ہے ،کیونکہ قرآن میںتمام مسائل کا حل موجودہے ۔لہذا قرآن کو پڑھیں، یادکریں،سمجھیں اور اپنی زندگی میں جاری کرلیں۔مولانا ضیاءالرحمن صاحب نے ”قرآن سے ہمارا تعلق کیسا“ کے موضوع پر سیر حاصل گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ ہمارا چلناپھرنا قرآن کا عملی نمونہ ہونا چاہیے۔

انجینئر ارشد صدیقی صاحب نے ”قرآن دور حاضر میں“ جیسے اہم موضوع پر سائنسی نقطہ نظر پیش کرتے کہا کہ قرآن نے جو باتیں آج سے چودہ سو سال پہلے بتائی ہیں آج کے سائنس داں مختلف طریقوں سے انہیں بار بار پیش کرکے فخر محسوس کرتے ہیں ۔

اپنے صدارتی خطاب میں حافظ حفیظ الرحمان نے کہا کہ اللہ کے رسول ا نے فرمایاہے کہ ”تم میں بہترین شخص وہ ہے جس نے قرآن سیکھا اور اسے سکھایا“۔ اس سے قرآن کی اہمیت وافادیت کا اندازہ کیاجاسکتاہے۔

جناب مشتاق مہدی صدر IMAحلقہ فحاحیل نے اپنے اختتامی کلمات میںمقررین ، شرکاءاورتمام تعاون کرنے والوں کا شکریہ ادا کیا، مزید انہوں نے پروگرام کی اہمیت کو بھی اجاگرکرتے ہوئے کہاکہ قرآن اللہ کی آخری کتاب ہے اور قیامت تک رہے گی ، دنیاوآخرت میں نجات حاصل کرنے کے لیے قرآن کو پڑھنا ،سمجھنا اور اس پر عمل کرنا اور دوسروں تک اس کے پیغام کو پہونچانا ہمارا اخلاقی اور دینی فریضہ ہے ، اس اہم پروگرام میں سو سے زائد ترجمہ قرآن ضرورت مندوں میںمفت تقسیم کئے گئے ۔ (رپورٹ : محمد خالد اعظمی)

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*