عالمی خبریں

محمدخالد اعظمی (کویت )

بیت المقدس کی تاریخ اور تعلیمی نصاب

خرطوم۔فلسطینی وزیراعظم اسماعیل ہانیہ نے عالم اسلام اور عرب ممالک پر زور دیاہے کہ وہ بیت المقدس کی تاریخی اورتہذیبی اہمیت کو فراموش ہونے سے بچانے کے لئے القدس کو اپنے تعلیمی نصاب میں شامل کریں۔ ان کا کہناہے کہ اگر ہم بیت المقدس کو دشمن کے قبضے سے چھڑانا چاہتے ہیں تو ہمیں شہر مقدس کے باشندوں کی سیاسی ، مادی ، معنوی اور اخلاقی ہر میدان میں مدد کرنا ہوگی، انہوں نے مزید کہا کہ عرب ممالک میں آنے والی تبدیلی کی تحریکوں کو ”مقدس انقلابات“کانام دیا جانا چاہئے کیونکہ ان انقلابات کے نتیجے میں عرب ممالک میں بیداری اور آزادی کی لہریں اٹھی ہیں۔

 بو عزیزی2011 کی خاص شخصیت

لندن ۔برطانیا کے (دی ٹائمز ) اخبارنے تیونس کے باشندہ محمد بوعزیزی کو سال کی خاص شخصیت قرار دیاہے، جن کی خودسوزی ان شورشوں کو ہوادی ہے جوعرب دنیا کے انقلاب کامحرک ہے،26سالہ بوعزیزی کے یہ اقدام نے ملازمتوں کے نہایت کم امکانات اور مواقع کے ساتھ گزر بسرکرنے والے لاکھوں عربوںکوسڑکوں پرنکل آنے پر مجبور کیا اورتبدیلی کی لہر پیداکی۔

فلپائنی اداکارہ مشرف بہ اسلام

ریاض:ٹی وی شوز میں نظرآنے والی فلپائن کی مقبول ترین گلوکارہ کوئن پیڈیلا مشرف بہ اسلام ہوگئی ہیں۔ ایک انٹرویو میں اس نے کہاکہ اب وہ شوبزنس سے اپنا ناطہ توڑ رہی ہیں ۔اپنی فلموں اور پروگراموں کے پروڈیوسرس اور ڈائرکٹرس کی جانب سے دبا ڈالے جانے سے متعلق سوال میں انہوںنے اپنے آپ سے سوال کیا کہ آیا میں ساری زندگی اللہ کی نافرمانی میں گزاردوں گی یا پھر مجھے اچھے مسلمان کی طرح اسلام پر عمل کرتے ہوئے زندگی گزارنا چاہئے ۔مجھے کافی کشمکش سے گزرنا پڑا جس کے بعد میں نے شوبزنس چھوڑنے کا فیصلہ کیا۔ قبول اسلام کے بعداب میرا ذہن ودل پاکیزہ ہوگیاہے۔

فیس بک کے باعث طلاق؟

لندن۔ ایک رپورٹ کے مطابق گزشتہ دوسالوںمیں دنیا بھر میں ہونے والی ایک تہائی طلاقوں کا سبب کسی نہ کسی طرح فیس بک رہاہے ۔ رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال بریطانیہ میں فائل کئے گئے پانچ ہزار طلاق کے کیسوں میں سے ۵۳فیصد میں فیس بک کاذکر موجود ہے ۔ قانونی ماہرین کے مطابق فیس بک پر ہونے والی دوستیاں اور تعلقات شادی شدہ جوڑوں کی زندگی میں تلخی بڑھانے کا سبب بنتے ہیں اور بعض اوقات اس کے ذریعے شوہر یا بیویاں اپنے ساتھی کی ایسی مصروفیت کے بارے میں بھی جان لیتے ہیں جن سے وہ عموماً بے خبرہوتے ہیں اور یوں نوبت طلاق تک پہونچ جاتی ہے۔

امریکن عورتیں اور جنسی تشدد

امریکا۔ امریکا میں ایک سروے کے مطابق ہر پانچ میں سے ایک عورت زندگی میں کبھی نہ کبھی جنسی تشدد کا شکارہوتی ہے۔ زیادتی کی شکار نصف خواتین کا کہناتھاکہ انہیں ان کے موجودہ یا سابق دوست یا شوہر نے جنسی تشدد کا نشانہ بنایاہے ۔ وہاں جنسی زیادتی سے مراد نشے کی حالت میں یا جبراً جنسی تعلق قائم کرنے کو قرار دیاجاتاہے۔ امریکہ میں ایک منٹ کے دوران پچیس لوگ جنسی زیادتی ، تشدد یاتعاقب کانشانہ بنتے ہیں۔

ایک سال کے دوران دس لاکھ عورتوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے واقعات سامنے آئے ہیں، ساٹھ لاکھ سے زائد مرد اور خواتین کا تعاقب کیا گیاجبکہ ایک لاکھ بیس ہزار مردوخواتین نے اپنے ہی ساتھی کی جانب سے جنسی زیادتی ، جسمانی تشدد یا تعاقب کئے جانے کی شکایت کی۔اور ہر سات میں سے ایک مرد بھی اپنے ساتھی کے ہاتھوں شدید نوعیت کے جسمانی تشدد کا شکارہوا۔دوسری جانب مردوں میں بھی ہرسات میں سے ایک مرد کو جنسی تشدد کا نشانہ بنایا گیایا اس کے ساتھ ایسا کرنے کی کوشش کی گئی۔ اور پچیس فیصد مردوں کودس سال سے کم کی عمر میں جنسی تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔

قومی ترانہ کی سنچری مکمل

نئی دہلی ۔ ہندوستان کے قومی ترانہ (جن گن من ) کے ایک سوسال مکمل ہوگئے ۔27 دسمبر1911ءکو انڈین نیشنل کانگریس کے کلکتہ اجلاس میں پہلی بار یہ ترانہ گایا گیاتھا۔ نوبل انعام یافتہ رابندر ناتھ ٹیگور نے یہ ترانہ قلم بند کیا تھا ۔دستور ساز اسمبلی نے 24جنوری 1950ءمیں اس ترانہ کو منظور کیا تھا۔1911ءہی میں ٹیگور نے بنگالی سے انگریزی میں (جن گن من ) کا ترجمہ کیا۔

 

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*