ہدايت كي كرنيں

 MTV سے مکہ مکرمہ تک

 میوزک ٹی وی چینل MTV کی مشہوراناؤنسرکرسٹیان بیکر نے 1995 میںاسلام قبول کیا تھا ۔ حال ہی میں ان کی ایک کتاب  ’ MTV سے مکہ مکرمہ تک‘ منظرعام پر آئی ہے ۔ جس میں انہوںنے قبولِ اسلام کی مفصل روداد بیان کی ہے اورواضح کیا ہے کہ اسلام نے کیسے ان کی زندگی کو بدل کر رکھ دیا ۔ وہ کہتی ہے کہ MTV میں اس کو روحانیت سے خالی زندگی کا تجربہ کرنا پڑا جس کے باعث اس نے اسلام کوگلے لگایا اورسعادت مند زندگی سے مالامال ہوئی ۔ قبول اسلام کے بعد اسے جرمن میڈیا کی سخت تنقید کا بھی سامناکرنا پڑا،اسی طرح اس کے قریبی اور خاندان والوںنے بھی لاپرواہی برتی، تاہم کچھ دنوںکے بعدہی اس کے والدین کا رویہ بالکل سنجیدہ ہوگیا، اب وہ ان سے بہت خوش ہیں۔ وہ کہتی ہیں کہ میں آج اسلام کوپاکر بڑی سعادت کی زندگی گذار رہی ہوں ،جس نے مجھے اونچا مقام عطاکیا ہے ۔ اس سے میرے اہل خانہ بھی بہت متاثر ہوئے ہیں ،حالیہ دنوںمیری اولیں ترجیحات میں اہل خانہ تک اسلام کی دعوت پہنچانی ہے ۔

  امریکی نرس حلقہ بگوشِ اسلام

 ریاض کے بطحاء دعوتی سینٹر میں 7 غیرملکی خواتین نے اسلام کی سعادت حاصل کی جن میں ایک چالیس سالہ امریکی نرس بھی ہے ۔دعوتی سینٹر کے مدیر شیخ نوح القرین نے ایک پریس ریلیز میںکہا کہ امریکی نرس جو ریاض کے ایک ہاسپیٹل میں ملازمت کرتی ہے ،اس نے اپنی مسلمان سہیلیوں سے اسلام کی بابت سنا تو بہت متاثر ہوئی اوراسلام کا تعارف حاصل کرنے کی خواہش سے بطحاءدعوتی سینٹر کی زیارت کی یہاںتک کہ اسے اسلام کی سعادت نصیب ہوگئی ۔ اس سے پہلے ہفتہ میں ۶ غیرملکی خواتین نے بھی اسلام قبول کیا ۔

امریکی کوچ اسلام کے سایہ میں

سعودی ہلال فٹ بال ٹیم کو ٹریننگ دینے والے امریکی کھلاڑی مارٹن بیور نے اسلام قبول کرلیا ۔ اس نے جدہ کے دعوتی سینٹر کی زیارت کرکے اسلام کو گلے لگایا۔ دعوتی سنٹر کے مدیر بدر العلیان نے کہا کہ 25 سالہ بیور نے ہلال کمیٹی کے کھلاڑیوں کے حسن اخلاق اورسعودی عرب کے روحانی ماحول کا مشاہدہ کرنے، قرآن سننے اور باجماعت نمازکا روح پرورمنظر دیکھنے سے متاثر ہوکر اسلام قبول کیا ہے ۔ بیور جس کانام’ محمد‘ رکھا گیا نے کہاکہ میں نے اسلام شرح صدر سے قبول کیا ہے ،اسلام میری ذاتی پسند ہے ،اورہرانسان کو اختیارہے کہ وہ جودین چاہے اختیار کرے۔انہوںنے مزیدکہا کہ ”جب میں نے کسی اسلامی چینل پر خانہ کعبہ اور طواف کا خوشنما منظر دیکھا توامریکہ روانگی سے قبل ہی میرے اندراسلام کی بابت جانکاری حاصل کرنے کا شوق پیدا ہوگیا تھا ۔البتہ جدہ دعوتی سنٹر میں جانے کے بعد انگریزی زبان کے ایک داعی نے مجھے انگریزی میں ’تعارف اسلام ‘پر مبنی چندلٹریچر دئیے جس کے مطالعہ کے بعد میںاسلام سے پوری طرح مطمئن ہوگیا ۔

اس سے قبل اگست2010 میں ہلال کمیٹی کے ڈاکٹر بلجیئم کارل ولیم نے ریاض کے بدیعہ دعوتی سنٹرمیں اسلام قبول کیا تھا اوراپنانام ’فیصل ‘ رکھا تھا ۔

 

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*