مشعلِ راہ ….سیدھا راستہ

(مولانا محمد کمال ۔ فروانیہ، كويت)

سیدھا راستہ کیا ہے۔ اور اسکی اہمیت کیا ہے؟ سیدھا راستہ یہ ہے کہ انسان دنیا میں وہ طرز عمل اختیار کرے جو اسے اپنے رب تک پہنچا دے۔ اور اسکی رضا جنت کی شکل میں حاصل کرے ۔ یہ راستہ اللہ کی کتاب قرآن مجید اور اسکے نبی ا کی سیرت پر مشتمل ہے۔ یہ دونوں سرچشمہ ہائے ہدایت انسان کو جس طرز عمل کو اختیار کرنے کی ہدایت دیتے ہیں وہی دراصل کامیابی کا راستہ ہے۔ نبی اکرم ا نے ایک دفعہ زمین پر ایک سیدھی لکیر کھینچی اور فرمایا کہ یہ سیدھا راستہ یعنی صراط مستقیم ہے۔ اور پھر دائیں اور بائیں ٹیڑھی لکیریں کھینچیں اور فرمایا کہ یہ شیطان کے راستے ہیں۔ اور ہر راستہ کے سرے پر ایک شیطان بیٹھا ہوا ہے۔ اس سیدھے راستے کی اہمیت کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ اللہ تعالیٰ نے مومنین کے اوپر یہ لازمی قرار دیا ہے کہ وہ نماز کی ہر رکعت کے اندر یہ دعا کریں کہ اے اللہ ہمیں سیدھا راستہ دکھا۔ سیدھے راستے (صراط مستقیم) پر چلتے ہوئے آدمی اپنی منزلِ مقصود تک پہنچ سکتا ہے۔ اور جونہی اس نے سیدھا راستہ چھوڑ دیا وہ منزل ِ مقصود سے دور ہوگیا۔ اور ظاہر ہے یہ سیدھا راستہ علم کے بغیر حاصل نہیں کیا جاسکتا ہے۔ کسی شاعر نے کیا خوب کہا ہے:
” چوں شمع از پئی علم باید گداخت کہ بے علم نہ تواں خدارا شناخت”
”علم حاصل کرنے کے لیے موم بتی کی طرح پگھلنا چاہیے کیونکہ علم کے بغیر اللہ کو نہیں پہچانا جاسکتا“۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*