مردِ مسلمان . . . .

ہر لحظہ ہے مومن کی نئی شان، نئی آن
گفتار میں ، کردار میں، اللہ کی برہان
قہاری و غفاری و قدوسی و جبروت
یہ چار عناصر ہوں تو بنتا ہے مسلمان
ہمسایہءجبریلِ امیں بندہ خاکی
ہے اس کا نشیمن نہ بخارا نہ بدخشان
یہ راز کسی کو نہیں معلوم کہ مومن
قاری نظر آتا ہے ، حقیقت میں قرآن
قدرت کے مقاصد کا عیار اس کے ارادے
دنیا میں بھی میزان، قیامت میں بھی میزان
جس سے جگرِ لالہ میں ٹھنڈک ہو، وہ شبنم
دریاو¿ں کے دل جس سے دہل جائیں، وہ طوفان

(علامہ اقبالؒ)

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*