عالمی خبریں

 محمد خالد اعظمی(کویت)

  امریکا میں قرآن کریم کی بے حرمتی

واشنگٹن ۔ دنیا کے سب سے بڑے جمہوری ملک امریکا کے شہر فلوریڈا کے ایک چرچ میں ایک عیسائی مبلغ نے قرآن مجید کی بے حرمتی کی ۔قرآن مجید کے نسخہ کو ایک گھنٹے تک کیروسین تیل میں ڈبویا گیا اور پھر اسے نذر آتش کیا گیا۔موقع واردات پر موجود لوگوں نے اس نفرت انگیز منظر کی تصویر کشی کی۔

دوبارہ یہ شخص امریکامیں واقع اسلامک سنٹر کے روبرو سرعام مخالف اسلام مظاہرہ کرنے کا منصوبہ بنارہا ہے۔یہ دنیا بھر میں مہذب معاشروں کے درمیان ہم آہنگی کے فروغ کی کوششوں کے لیے ایک دھکاہے ۔ امریکہ کے مسلمانوں نے ٹیری جوننس اور اس کے حامیوں کے چھوٹے سے گروپ کی اس حرکت کا جواب دینے سے گریز کیا۔ کونسل آف امریکن اسلامک ریلیشنس کے ترجمان نے کہا کہ جونس کو15 منٹ کی شہرت ملی ہے اور ہم اس میں مزیدکچھ منٹس کا اضافہ کرنا نہیں چاہتے ۔ تاہم اس بیان کے آنے کے بعد دنیامیں بسنے والے مختلف ممالک کے مسلمانوں کی طرف سے سخت احتجاج ہواہے۔

مصر میں آئینی اصلاحات منظور

قاہرہ ۔ مصرمیں ووٹروں کی ایک واضح اکثریت نے صدر کے عہدہ کی میعاد اور دیگر آئینی ترامیم کو بھاری اکثریت سے منظور کرلیاہے۔ 40ملین عوام کوحق رائے دہی سے استفادہ کا موقع فراہم ہوا۔ ملک کی دوسیاسی واہم جماعتوں نیشنل ڈیموکریٹک پارٹی اورا خوان المسلمین نے ان تجاویز کی تائید کی ہے۔ ان ترامیم کے ذریعہ کوئی بھی صدر صرف دو میعاد تک اپنے عہدہ پر برقرار رہ سکتاہے ۔ اور ایک میعاد چار سال کی ہوگی۔

پاکستان میں4,10,000 تپ دق کے مریض

اسلام آباد۔ وزارت صحت کے مطابق پاکستان میں ہرسال تپ دق کے 4 لاکھ10ہزار نئے کیس رپور ٹ ہورہے ہیں اور 2050ءتک بھی ملک سے ٹی بی کے خاتمے کا کوئی امکان نہیں ۔ ہرسال ایک لاکھ کی آبادی میں24افراد ٹی بی کے باعث لقمہ اجل بن رہے ہیں ، وزارت صحت کے مطابق پاکستان میں دولاکھ ستر ہزار افراد ٹی بی کے مرض میں مبتلا ہیں اور اس مرض میں تیزی سے اضافہ بھی جاری ہے ۔ تپ دق سے متاثرہ دنیا کے دس ممالک میں پاکستان کا نمبر آٹھواں ہے ۔

 امام حرم کا سہ روزہ دورہ  ہند

دہلی ۔ جمعیة علماءہندکی خصوصی دعوت پر امام حرم شیخ ڈاکٹر عبد الرحمن السدیس نے 26مارچ دہلی میںمنعقدعظمت صحابہ کانفرنس میں شرکت کی ۔ یہ ان کا اپنی نوعیت کا پہلا سفر تھا ۔ اس سفرمیں امام حرم مختلف مسالک ومذاہب کے اداروں میں تشریف لے گئے،اہم شخصیات سے ملاقاتیں کیںاوران اداروں میں امامت بھی کی۔امام حرم کی امامت میں نمازیں پڑھنے والوں کا جم غفیر تھا،بقول شیخ السدیس ”میں نے اتنی بڑی بھیڑحرم کے علاوہ کہیں اور نہیں دیکھی اور اہل دہلی نے اتنی زیادہ عزت دی ہے جس کا میرے وہم وگمان میں بھی نہ تھا“۔

دوران سفرامام حرم ازہر ہند دارالعلوم دیوبندکی رشیدیہ مسجدمیں نماز جمعہ پڑھائی اور ادارے کے دوسرے شعبہ جات کوبھی دیکھا۔شیخ السدیس نے اپنے خطبہ میں فرمایا کہ ”مذہب اسلام اور پیغمبر اسلام ا مسلمانوں اورپوری دنیا کے لیے رحمت بن کرآئے ہیں، اس لیے مسلم اور غیر مسلم سبھی کومل جل کر اور پیار ومحبت کے ساتھ رہناچاہیے“۔ امام حرم نے دارالعلوم کی خدمات کو سراہتے ہوئے کہا کہ دارالعلوم دیوبند مذہب اسلام کی تعلیم دینے والی سب سے بڑی یونیورسٹی ہے اوریہاں قرآن وحدیث کی تعلیم حاصل کرکے فارغ ہونے والے ہزاروں علماء دنیا کو علم کی روشنی سے منور کررہے ہیں ۔ دارالعلوم دیوبنداور قرب وجوار کے لوگوں نے امام حرم کا شاندار استقبال کیا ۔

 مرکز جماعت اسلامی ہند ، مرکزی جمعیت اہلحدیث ہند، جامع مسجد، انڈیا اسلامک کلچرل سنٹرکے علاوہ متعدد مقامات پر تشریف لے گئے، خطاب فرمایا ، نمازیں پڑھائیں،مدارس کے  ذمہ داران سے ملاقاتیں کیں ،اسی طرح شیخ السدیس نے سیاسی شخصیات سے ملاقاتیں بھی کیں، ڈپٹی چیرمین راجیہ سبھا ’کے رحمان خان‘ نے امام حرم کے اعزاز میں عشائیہ کا اہتمام کیا، شرکاءمیں وزیراعظم جناب منموہن سنگھ ، نائب صدر جمہوریہ محمد حامد انصاری کے علاوہ کابینہ کے وزراء، ممبران پارلیمنٹ ، مقتدر علمائے کرام ، دانشوراورمعزز سماجی کارکنان نے شرکت کی۔ ڈپٹی چیرمین راجیہ سبھا نے اپنی تقریر کے اختتام پر امام حرم کو ہندوستان کی جمہوری حکومت کے طریقہ کار اوریہاں کے عوام کے اتحاد سے روشناس کرایا، اور انہوں نے امام حرم سے اپنے ملک کی ترقی اور خوشحالی اور پورے عالم کے مسلمانوں کی سلامتی کے لیے خصوصی دعاکی درخواست کی ۔ امام حرم نے اپنی نیک تمناؤں کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہماری دعا ہے کہ ہندوستان اور سعودی عرب کے درمیان جو تہذیبی اور روایتی رشتے ہیں وہ ہمیشہ قائم رہیں اوردونوں ملکوں کے عوام کے درمیان آپسی محبت اور بھائی چارہ روز بروز فروغ پاتارہے۔

 جمعیت علمائے ہندکے زیر اہتمام تاریخ ساز ”عظمت صحابہ کانفرنس “ دہلی کے مشہور رام لیلا میدان میں منعقد ہوئی جس کے مہمان خصوصی امام حرم تھے ،امام حرم نے مغرب وعشاءکی نماز رام لیلا میدان میں پڑھائی اور لاکھوں کے مجمع سے خطاب بھی کیا ، آپ نے اپنے خطاب میں فرمایا کہ” عظمت صحابہ کرام کے اس اجلا س میں آپ لوگوں کی شرکت سنت رسول اللہ ا اوردین اسلام سے محبت وعقیدت کی علامت ہے ۔ صحابہ کرام  وہ جماعت ہیں جن کے ذریعہ اصل دین ہم تک پہونچاہے لہذا صحابہ کرام کی عظمت کو برقرار رکھنا ہماری ذمہ داری ہے “۔ امام حرم نے ملت اسلامیہ ہند کے جوش وجذبہ کا احترام کرتے ہوئے تین مرتبہ فرزندان توحید کا شکریہ اداکیا نیز ملت اسلامیہ ہند سے کہا کہ میں خانہ کعبہ جاکر دعا کرونگاکہ ہندوستان کے آپسی بھائی چارے میں مزید اضافہ ہو۔ اور ان میں آپسی محبت واخوت برقرار رہے۔جمعیت علمائے ہند کے اس پروگرام میں ہندوستان کی تمام اہم جماعتوں کے ذمہ داروں نے شرکت کی۔

امام حرم ڈاکٹرعبد الرحمن السدیس نے ہندوستان میں حاضری دے کر مسلمانان ہند کو اپنے گراں قدر بیانات، مواعظ اور دعاؤں سے نوازا اور عالم اسلام میں اتحاد واتفاق کی بے نظیر مثال پیش کی نیز مختلف مسلکوں، اداروں، مدرسوں اور اہم شخصیات کو یہ پیغام دے گئے کہ وہ آپس میں مل جل کررہیں۔

 اسیمانند اقبالیہ بیان سے مکرگیا

دہلی : سوامی اسیمانند جس نے چندماہ قبل سمجھوتہ اکسپریس ، مالیگاؤں، اجمیر اور مکہ مسجد میں ہونے والے بم دھماکوں میں اپنی شمولیت کا اقرار کرکے میڈیامیں تہلکہ مچادیاتھا اب اپنے اقبالیہ بیان سے مکڑ گیا ہے اوریہ کہنے لگاہے کہ اس نے اقبالیہ بیان تفتیشی ایجنسیوں کے دباؤ میں آکر دیاتھا ۔ حالانکہ یہی سوامی ہے جسکے اقبالیہ بیان کے بعد متعددبار اس سے پوچھ گچھ کی گئی ، مجسٹریٹ نے یہاں تک کہا کہ تم یہ اقبالیہ بیان دینے کے پابند نہیں ہولیکن دیا توتمہارے خلاف استعمال کیاجائے گا ۔ سوامی نے کہاتھا: ”مجھے پتہ ہے ، یہ بھی جانتا ہوںکہ اس بیان پر مجھے سزائے موت بھی ہوسکتی ہے ،لیکن مجھے اس کی پرواہ نہیں ، میں صرف سچ بولنا چاہتا ہوں“۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*