عالمی خبریں

محمدخالداعظمی (کویت)

taleem95@hotmail.com

 رابطہ عالم اسلامی کانفرس

 مکہ مکرمہ : ”اسلامی دنیا ، مسائل اور حل “کے زیر عنوان رابطہ عالم اسلامی کانفرنس مکہ مکرمہ میںمنعقدہوئی، کانفرنس میں برصغیر ہندوپاک سمیت دنیا بھر سے ۵۲ ممالک کے علماءشریک ہوئے۔اس موقع پر شاہ عبد اللہ بن عبد العزیز کاامت مسلمہ کے نام پیغام میں کہا گیا کہ امت مسلمہ کے مسائل کے حل کے لیے منظم لائحہ عمل تیار کریں، داخلی جماعتوں کی نادانیوں اور خارجی یلغارسے نمٹنے کے لیے ٹھوس اور مؤثر لائحہ عمل ناگزیر ہے ، شاہ عبد اللہ کے پیغام میں کہا گیاکہ امت مسلمہ کو مسلک پرستی اور فرقہ پرستی کی بنیادوں پر منتشرکرنے کی کوشش کی جارہی ہے ، علماءمسلک پرستی اور فرقہ پرستی کی کوششوں کی مزاحمت کریں ۔

  مفتی اعلی سعودی عرب شیخ عبد العزیز آل الشیخ نے کہا کہ امت مسلمہ اپنی تاریخ کے انتہائی نازک دور سے گزررہی ہے ، ہمیں علم کی روشنی گھرگھرپہنچانی چاہیئے ، عوام اور حکام کے درمیان رابطے قائم رکھنے کی اشد ضرورت ہے۔

ڈاکٹر فضل الرحمن فریدی کا انتقال

علی گڑھ : 79 سالہ ڈاکٹرفضل الرحمن فریدی کا ۵۲ جولائی کی صبح علی گڑھ میں حرکت قلب بند ہوجانے سے انتقال ہوگیا انا للہ وانا الیہ راجعون۔ڈاکٹرفریدی جماعت اسلامی ہند کے اکابرین میںسے تھے۔مرکزی مجلس شوری اور مجلس نمائندگان کے رکن نیزماہنامہ ’زندگی نو‘اور انگریزی ہفت روزہ ’ریڈینس‘ کے مدیر کے طور پر خدمات انجام دیں۔ موصوف ادارہ تحقیق وتصنیف اسلامی علی گڑھ کے بھی سکریٹری تھے ۔ ڈاکٹرفریدی کی پیدائش 2 اپریل1932ءکو اترپردیش کے مچھلی شہر میں ہوئی تھی ۔مقامی اسکول میں ابتدائی تعلیم کے بعد الہ آباد یونیورسٹی سے گریجویشن اور علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے معاشیات میںپوسٹ گریجویشن اور ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی۔ ثانوی درسگاہ رامپور سے اسلامی علوم میں فراغت کے بعد بہ حیثیت استاد1960ءمیں علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں شعبہ اقتصادیات سے وابستہ ہوگئے ۔ تدریس کے سلسلے میں بیرون ممالک کا بھی سفرکیا۔ سعودی عرب کی شاہ عبد العزیز یونیورسٹی میں ایک طویل عرصے تک رہے معاشیات کے پروفیسرکی حیثیت سے ریٹائرہوئے ۔مرحوم نے تقریباً اردو اور انگریزی میں دو درجن کتابیں تصنیف کیںجن میں سے بیشتر اسلامی اقتصادیات سے متعلق ہیں۔

 بنگلہ دیش میں’اللہ‘ پر تنازعہ

ڈھاکہ :حال ہی میں بنگلہ دیش میں ترمیم شدہ دستور میں لفظ ’اللہ‘ کی بحالی کا مطالبہ کرتے ہوئے وہاں کی سیاسی اور دینی جماعتوں نے ہڑتال کی ، یہ لوگ حالیہ ترمیم شدہ دستور میں ’خالق‘ پر مکمل ایمان اور اعتماد کے فقرہ کے بجائے’ اللہ‘ پر مکمل ایمان اوراعتماد کے الفاظ بحال کرنے کا مطالبہ کررہے تھے۔

جنوبی سوڈان 193واں نیا ملک

جوبا: تیل کی دولت سے مالامال جنوبی سوڈان عالمی نقشہ پر ایک نئے ملک کے طور پر ابھرا ۔ شمالی سوڈان خرطوم کے زیر حکومت جنوبی سوڈان سے شمالی سوڈان کے ساتھ برسوں کی خونریز جنگ کے بعد جس میں تقریباً 15 تا 20 لاکھ افراد ہلاک ہوئے‘ یہ آزادی حاصل کی ہے۔ جنوبی سوڈان دنیا کے 193ویں ملک کے طور پر ابھر اہے ۔ جبکہ اقوام متحدہ کے افریقی رکن ممالک میں اسکا نمبر54واںہے ۔ جنوری میں ہونے والے ریفرنڈم میں ملک کے جنوب میں بسنے والے 99 فیصد رائے دہندگان نے سوڈان سے علیٰحدگی کے حق میں ووٹ دیاتھا۔اور سلواکیرمایاردیت وہ خوش نصیب لیڈرہیں جنہیں جنوبی سوڈان کا پہلا صدر بننے کا اعزاز حاصل ہوا ہے ۔ سلواکیر نے1960ءکی دہائی کی پہلی خانہ جنگی اور دوسری خانہ جنگی میںحصہ لیا اور جنوبی سوڈان کو ایک آزاد ملک بنانے کے لیے کافی جدوجہدکی ۔

اسکول میں نماز پر پابندی کا مطالبہ

ٹورنٹو:ٹورنٹو کے سب سٹی نارتھ بلاک میں واقع ایک اسکول میں جمعہ کی نماز پر ہندوحامی گروپوں نے ناراضگی کا اظہار کیاہے۔ ویلی پارک مڈل اسکول کے 400 مسلم بچوں کے لیے دوپہر کی نماز کانظم 3 سال قبل شروع کیا تھا۔ ناراض ہندو حامی تنظیمیں چاہتی ہیں کہ 40 منٹ کی اس عبادت پر فوری روک لگائی جائے ۔ یہ نماز ایک مسجد سے بلائے گئے ایک امام کے ذریعہ پڑھائی جاتی ہے۔

 ہندوستانی یہود اسرائیل میں….

یروشلم : اسرائیل ایک بار پھر شمال مشرقی ہند سے تعلق رکھنے والے یہودیوں کا جنہیں عام طور پر ’بینے میناشی ‘ کہاجاتاہے ، اپنے ہاں خیرمقدم کرنے کے لیے تیارہے مقام عبرت ہے مسلم ممالک کے لیے جواپنے ملک میں اپنے ہی بھائیوں کو بسانے سے گریز کرتے ہیں۔

 خواتین کا پہلا سنیما گھر

قطر: قطر ،مسلم دنیا کاواحد ملک ہے جہاں صرف خواتین کے لیے مخصوص سینما تھیٹر کا افتتاح ہوا۔ اس تھیٹر میں وہ تمام فلمیں دکھائی جائیں گی جو دار الحکومت دوحہ کے دیگرسینما گھروں میں دکھائی جاتی ہیں ۔ 154نشستوں پر مشتمل اس سینما گھر میں جمعرات ، جمعہ اور ہفتہ کو سہ پہر 3بجے ، شام 5 بجے اور شام 7 بجے تین شوز دکھائے جائیں گے۔

اپنے ہی ملک میں سوتیلہ پن کیوں

جدہ : بعض ایسے سعودی شہری جن کی ماؤں کا تعلق دیگر ممالک سے ہے ان کا کہنا ہے کہ انہیں اپنے ہی ملک میں دوسرے درجے کا شہری سمجھا جاتاہے اورانہیں نصف سعودی سے تعبیر کیا جاتاہے۔ اور اکثر وبیشتر انہیں تارکین وطن بھی تصور کیا جاتاہے خصوصی طور پر اس وقت جب وہ نیلی آنکھوں اور سنہری بالوں کے ساتھ انگریزی لہجہ میں گفتگو کرتے ہیں۔ ان کی یہ شکایتیں بھی ہیں کہ ان کے ساتھ ان کی والدہ کی قومیت کولے کر بیہودے مذاق کئے جاتے ہیں۔ ایسے بچے جن کی ماں برطانوی یا امریکی نژاد ہوں انہیں ضرورت سے زیادہ پریشان کیا جاتاہے او رانہیں ’نصف انگریز‘ سے ملقب کیاجاتاہے ۔ ایسے طلباءوطالبات سے زیادہ ترمدارس میں چھیڑے جانے کی شکایت ہے ۔

 168سالہ اخبار (نیوز آف دی ورلڈ) بند

لندن : غیر قانونی طریقوں سے خبریں حاصل کرنے کے تنازعہ کے درمیان 168 سال قدیم اخبار (نیوز آف دی ورلڈ) کے آخری شمارہ کو خریدنے کے لیے قارئین امڈ پڑے ۔ تنازعہ کی وجہ سے اس اخبار کو بندکردیا گیا۔ اس اخبار کی شہ سرخی ’شکریہ اور الوداع ‘ تھی ۔ جریدے نے اپنے آخری شمارہ میں فلاحی تنظیموں کے اشتہار مفت شائع کئے اور صفحہ اول پر ایک سطر میں کہا گیا کہ اس تاریخی شمارہ سے حاصل ہونے والا منافع خیراتی سرگرمیوں پر خرچ کیا جائے گا۔یہ شمار ہ 50 لاکھ کاپیوں پر مشتمل تھا۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*